مستقبل میں دنیا کا ہر شخص کوئٹہ سے کیوں واقف ہوگا

0
70
Ronna Quetta Ronto Quecto کوئٹہ

کوئٹہ  مستقبل میں دنیا کا ہر شخص اس نام سے واقف کیوں ہو گا؟

کیا آپ نے کبھی سوچا ہے کہ دنیا بھر میں انٹرنیٹ پر اس وقت جتنا بھی ڈیٹا محفوظ ہے، اس کا سائز کیا ہے؟ اور پھر پاکستان کے شہر کوئٹہ کا اس ڈیٹا سے کیا تعلق ہے؟ یہ بات بہت حیران کن بھی ہے اورتھوڑی سی  پیچیدہ بھی۔

دنیا بھر میں  وزن کے لیے جو اصطلاحات استعمال ہوتی ہیں ان میں گرام، ملی گرام، ملی لیٹر ، لیٹر، کلو گرام،سیر، من  اور ٹن کے الفاظ بولے جاتے ہیں۔ اسی طرح فاصلے کے لیے  فرلانگ، میل، میٹر یا پھر کلومیٹر بھی بولے جاتے ہیں۔

 لیکن جس رفتار سے انسانیت ترقی کر رہی ہے اور دنیا بدلتی جا رہی ہے، اسی رفتار سے سائنسی ماہرین کے طے کردہ پیمائش اور وزن کے پیمانے بھی چھوٹے پڑتے جا رہے ہیں۔

پیمائش اور اوزان کے ان پیمانوں کا تعین ایک ایسی عالمی کانفرنس کرتی ہے، جو ہر چار سال بعد فرانسیسی دارالحکومت پیرس میں منعقد ہوتی ہے۔ اس کانفرنس کو پیمائش اور اوزان کی جنرل کانفرنس کہتے ہیں اور اس کا انعقاد اوزان اور پیمائشوں کا انٹرنیشنل بیورو کرتا ہے۔

ایسی تازہ ترین عالمی کانفرنس کا انعقاد فرانس  میں 15 سے 18 نومبر تک ہوا۔ اس جنرل کانفرنس میں دنیا کے 64 ممالک کے اعلیٰ ماہرین اور سائنسی نمائندوں نے حصہ لیا۔ اس میں پیمائشوں اور اوزان کے موجودہ عالمی نظام میں کئی نئے اضافوں کا فیصلہ کیا گیا۔

یہ اضافے اس کانفرنس کے آخری روز متفقہ طور پر منظور کیے گئے اور ان کے فوری طور پر نفاذ کا فیصلہ بھی کر لیا گیا۔

ناظرین:  1991 کے بعد یہ پہلا موقع تھا کہ اس عالمی کانفرنس نے اپنے مسلمہ معیارات میں نئے اضافوں کا فیصلہ کیا۔

پیمائشی اکائیوں کے عالمی نظاموں میں رواں صدی کے دوران پہلا اضافہ

اس عالمی کانفرنس کے شرکاء کا خیال تھا کہ تیز رفتار سائنسی ترقی اور ورلڈ وائڈ ویب (www) پر محفوظ کیے گئے ڈیٹا کے حجم میں ناقابل یقین رفتار سے جو اضافہ ہو چکا ہے اور جو آئندہ برسوں میں مزید ہو گا، اس کے پیش نظر پیمائشوں اور اوزان کے موجودہ عالمی نظاموں میں بھی توسیع  کرنا ضروری ہو چکا ہے۔

اس سلسلے میں ایک فیصلہ کن قدم ایک برطانوی سائنس دان ڈاکٹر رچرڈ براؤن نے اٹھایا۔

 انہوں نے موجودہ گلوبل یونٹ سسٹمز میں بڑی سے بڑی اور چھوٹی سے چھوٹی چیزوں کی پیمائش اور اوزان کے تعین کے لیے سابقوں یا سابقات (prefixes) کی صورت میں اس کانفرنس کے شرکاء کو چار ایسی نئی لیکن جدت پسندانہ اصطلاحات تجویز کیں، جو اتفاق رائے سے منظور کر لی گئیں۔

یہ بھی پڑھیں: ڈیجیٹل مارکیٹنگ ایک تعارف

ڈیٹا سائنس دان بے بس ہو گئے تھے

برطانیہ کی نیشنل فزیکل لیبارٹری کے میٹرولوجی (Metrology) کے شعبے کے سربراہ ڈاکٹر رچرڈ براؤن کے بقول، ”گزشتہ 30 برسوں میں دنیا بھر میں موجود ڈیٹا دن دگنی اور رات چوگنی رفتار سے بڑھتا رہا ہے۔ ڈیٹا ماہرین کو احساس ہو گیا تھا کہ ان کے پاس اب ایسے کوئی الفاظ یا معیارات موجود ہی نہیں، جن کی مدد سے ڈیٹا سٹوریج کی ایسی کسی سطح کو بیان کیا جا سکے۔ اس لیے یہ نئی اصطلاحات لازمی ہو گئی تھیں اور یہ عمل مستقبل میں بھی جاری رہے گا۔‘‘

اس کانفرنس میں  جن چار نئی اصطلاحات کے فوری نفاذ کا فیصلہ کیاگیا ہے ، ان کے نام  یہ ہیں:

بڑی سے بڑی چیز کے لیے دو الفاظ منتخب کیے گئے ہیں یعنی:

 رونا (ronna)، کوئٹہ (quetta)

جبکہ چھوٹی سے چھوٹی چیز کو بیان کرنے کے لیے بھی دو ہی الفاظ منتخب کیے گئے ہیں یعنی:

رونٹو (ronto) اور کوئکٹو (quecto)۔

Ronna Quetta Ronto Quecto کوئٹہ
Ronna Quetta Ronto Quecto

رونا بڑا یا کوئٹہ

اب سوال یہ ہے کہ رونا بڑا ہوتا ہے یا کوئٹہ؟ اس کا جواب یہ ہے کہ:

 ایک کوئٹہ ایک ہزار رونا کے برابر ہوتا ہے۔ یعنی اگر کسی بہت بڑے عدد میں ایک کے بعد ستائیس مرتبہ صفر آئے تو وہ ایک رونا ہو گا:

 1000,000,000,000,000,000,000,000,000۔

اسی طرح کسی بہت بڑے عدد میں اگر ایک کے بعد تیس مرتبہ صفر آئے، تو وہ ایک کوئٹہ ہو گا:  1000,000,000,000,000,000,000,000,000,000۔

اب بڑی سے بڑی کے مقابلے میں اگر کسی چھوٹی سے چھوٹی چیز کا تصور کیا جائے، تو جو نئی اصطلاحات نافذ ہو گئی ہیں، وہ رونٹو اور کوئکٹو ہیں۔ کسی بہت چھوٹے عدد میں صفر اعشاریہ کے بعد مزید ستائیس صفر لگائے جائیں تو وہ ایک رونٹو ہو گا۔

0.000,000,000,000,000,000,000,000,000

اسی طرح ایک کوئکٹو ایک رونٹو سے بھی ہزار گنا چھوٹا ہو گا اور اس میں کسی عدد میں صفر اعشاریہ کے بعد مزید تیس صفر لگائے جائیں تو ایک کوئکٹو بنے گا۔

0.000,000,000,000,000,000,000,000,000,000

کوئٹہ تو پاکستان میں بلوچستان کا دارالحکومت ہے

اس کانفرنس میں  رچرڈ براؤن کی تجاویز میں سے کوئٹہ نامی جس یونٹ کو  نیا عالمی معیار مان لیا گیا ہے، اس کا صرف نام ہی پاکستانی صوبے بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ جیسا نہیں بلکہ انگریزی میں اس کے ہجے بھی بالکل وہی ہیں۔

لیکن ڈاکٹر براؤن نے کوئٹہ کا نام ہی کیوں منتخب کیا؟ انہوں نے ایسا بنا سوچے سمجھے نہیں بلکہ طویل غور و فکر کے بعد کیا۔ گنتی کے نئے عالمی یونٹ کے طور پر کوئٹہ کا بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ سے بالکل کوئی تعلق نہیں۔

اس کے باوجود یہ بات یقینی ہے کہ آئندہ برسوں میں پاکستانی شہر کوئٹہ کے اسی نام سے ایک نئے گلوبل اسٹینڈرڈ یونٹ کے طور پر دنیا کا تقریباﹰ ہر انسان اس سے  واقف ہو گا۔

چند حیران کن مثالیں

۔ ایک الیکٹران کی کمیت تقریباﹰ ایک رونٹوگرام ہوتی ہے۔

۔ کسی موبائل فون میں محفوظ ڈیٹا کی ایک بائٹ کی کمیت ایک کوئکٹوگرام ہوتی ہے۔

۔ زمین کے نظام شمسی کے پانچویں اور مجموعی طور پر سب سے بڑے سیارے مشتری کی کمیت صرف دو کوئٹہ گرام بنتی ہے۔

۔ اسی طرح پوری کی پوری قابل مشاہدہ کائنات کا قطر محض ایک رونامیٹر بنتا ہے۔

ڈاکٹر رچرڈ براؤن کے الفاظ میں، ”چیزیں پھیلتی جا رہی ہیں اور ہمیں نت نئے الفاظ کی ضرورت پڑتی ہے۔ پچھلی صرف چند دہائیوں میں ہی دنیا ایک بالکل مختلف جگہ بن چکی ہے۔‘‘

Ronna Quetta Ronto Quecto

مقبول ملک (اے پی کے ساتھ)

Here are the new prefixes:

  • quetta – 10 to the 30th power or 1,000,000,000,000,000,000,000,000,000,000.
  • ronna – 10 to the 27th power or 1,000,000,000,000,000,000,000,000,000.
  • ronto – 10 to the negative 27th power.
  • quecto – 10 to the negative 30th power.

Leave a Reply