20

بھارتیوں کے دماغ دنیا میں سب سے چھوٹے: تحقیق

آبادی کے لحاظ سے دنیا کے دوسرے بڑے ملک بھارت کے لوگ اگرچہ اس وقت ٹیکنالوجی، صحت و کاروبار سے متعلق کام کرنے والے عالمی اداروں کے ساتھ مل کر کام کر رہے ہیں، تاہم ایک حالیہ تحقیق سے پتہ چلا ہے کہ دراصل بھارتی لوگوں کے دماغ دنیا میں سب سے چھوٹے ہوتے ہیں۔

اپنی نوعیت کی یہ منفرد تحقیق خود بھارتی ماہرین نے کینیڈا سمیت دیگر ممالک کے ماہرین سے کی ہے اور اس تحقیق کے دوران بھارت کے مرد و خواتین کے دماغوں کا جائزہ لیا گیا تھا۔

بھارتی سائنس جرنل ’نیورولاجی انڈیا‘ میں شائع رپورٹ کے مطابق بھارتیوں کا دماغ نہ صرف مغربی ممالک کے افراد کے مقابلے دماغ چھوٹا ہوتا ہے بلکہ ان کا دماغ کئی مشرقی ممالک کے لوگوں سے بھی چھوٹا ہے۔

تحقیق میں بھارتی ماہرین نے بھی حصہ لیا—فوٹو: شٹر اسٹاک
تحقیق میں بھارتی ماہرین نے بھی حصہ لیا—فوٹو: شٹر اسٹاک

مذکورہ تحقیق میں بھارتی شہر حیدرآباد میں موجود ’انٹرنیشنل انسٹی ٹیوٹ آف انفارمیشن ٹیکنالوجی‘ (آئی آئی آئی ٹی) اور کینیڈا کی مک گیل اور مونٹریال یونیورسٹی کے ماہرین نے حصہ لیا۔

ماہرین نے ابتدائی طور پر 350 افراد کے دماغوں کی تصاویر اور مختلف ٹیسٹ سے ’برین ایٹلس‘ تشکیل دیا جو کسی بھی انسان کے دماغ کے حصوں کو جانچنے کا درست سائنسی طریقہ ہوتا ہے۔

اسی تحقیق کے دوران ماہرین نے 100 بھارتی افراد کے دماغوں کی ایم آر آئی اسکیننگ سمیت دیگر ٹیسٹوں کی مدد سے ’برین ایٹلس‘ کا خاکہ تیار کیا، جس کے بعد ماہرین نے بھارتی افراد کے برین ایٹلس کا موازنہ عالمی افراد کے برین ایٹلس سے کیا۔

رپورٹ میں بتایا گیا کہ حیران کن طور پر بھارتیوں کے دماغ دنیا کے دیگر ممالک کے افراد سے قدامت، جسامت، حجم اور ڈیزائن میں دوسروں سے مختلف اور چھوٹے پائے گئے۔

رپورٹ کے مطابق بھارتیوں کے دماغ چینی اور جنوبی کورین افراد سے بھی مختلف پائے گئے۔

رپورٹ میں بتایا گیا کہ بھارتیوں کے دماغ اگرچہ دوسرے ممالک کے لوگوں سے چھوٹے پائے گئے، تاہم اس کے نقصانات نہیں بتائے گئے لیکن اس امید کا اظہار کیا گیا کہ اس سے ہندوستانی لوگوں میں قبل از وقت الزائمر سمیت دیگر بیماریوں کا پتہ لگایا جا سکے گا۔

ماہرین نے واضح کیا کہ یہ تحقیق محدود تھی اور اس پر مزید کام کرنے کی ضرورت ہے۔

کوریا اور چینی افراد کے دماغ بھی بھارتیوں سے بڑے ہیں، ماہرین—فوٹو: شٹر اسٹاک
کوریا اور چینی افراد کے دماغ بھی بھارتیوں سے بڑے ہیں، ماہرین—فوٹو: شٹر اسٹاک

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں