اتنے زیادہ سپرم کیوں چاہیے

اتنے زیادہ سپرم کیوں چاہیے

سوال کچھ یوں ہے کہ “اگر ایک ہی سپرم انڈے کے ساتھ مل کر بچہ پیدا کردیتا ہے تو پھر اتنے زیادہ سپرم کیوں چاہیے ہوتے ہیں؟ اور اگر انتی تعداد میں سپرم نہ ہوں تو مردوں میں سپرم کی کمی کیوں ہوتی ہے؟”

جواب. جی ہاں ایک ہی سپرم سے انڈے کا ملاپ ہو تو zygote بن جائے گا اور انڈے کو ایک ہی سپرم کی ضرورت ہوتی ہے، ایک سے زیادہ سپرم ہوگا تو بچہ نہیں بنے گا ، جب انڈے میں ایک سپرم داخل ہوجاتا ہے تو اس کی بیرونی دیوار میں کچھ ایسی تبدیلیاں آتی ہیں جن کی وجہ سے دوسرا سپرم اس میں داخل نہیں ہوسکتا اور اس چیز کو block to polyspermy کہتے ہیں۔
لیکن مسئلہ ہے اس راستے کا جس راستے سے ہوتے ہوئے سپرم نے انڈے تک جانا ہوتا ہے ، ہر سپرم اس قابل نہیں ہوتا کہ وہ اس سفر کو طے کر کے انڈے تک جاسکے، کچھ سپرم تو نارمل ہی نہیں ہوتے۔ یعنی کہ وہ بنے ہی خراب ہوتے ہیں، اسی طرح پھر جب یہ سپرم خصیوں سے نکل کر مردانہ عضو تناسل کی نالیوں میں آتے ہیں تو بہت سے سپرم وہاں مر جاتے ہیں۔ دراصل مرد میں سپرم بننے اور مرنے کا سلسلہ پوری عمر ہی چلتا ہے سو فرض کریں کہ اگر مرد ایک بار میں ایک ہی سپرم بنائے (جیسے عورت ایک بار میں ایک ہی اندا بناتی ہے) اور وہ ایک سپرم بھی مر جائے تو کیا مرد اولاد پیدا کرنے کے قابل رہے گا ؟ جی نہیں
پھر جب یہ سپرم مادہ کے جسم میں داخل ہوتے ہیں تو سب سے پہلا مسئلہ تو مادہ کے vagina کی pH ہوتی ہے، سپرم کو 7 سے 8 کی تقریباً neutral pH چاہیے ہوتی ہے جبکہ مادہ کے vagina کی pH تین سے پانچ کے درمیان ہوتی ہے، یعنی تیزابی pH ہوتی ہے۔ اس تیزابی pH کی وجہ مادہ کے vagina میں موجود Lactobacilli بیکٹیریا ہے جو کہ گلوکوز کو lactic acid میں بدل دیتا ہے جس سے vagina کی pH تیزابی ہوجاتی ہے، اس تیزابی pH کی وجہ سے vagina میں داخل ہونے والے جراثیم ختم ہوجاتے ہیں، اور ساتھ ہی بہت سے سپرم بھی ختم ہوجاتے ہیں۔اسی طرح بہت سے سپرم اس تیزی سے حرکت نہیں کر پاتے اور انڈے تک پہنچنے سے پہلے ہی nutrition کی کمی اور pH کی وجہ سے ختم ہوجاتے ہیں۔ اور زیادہ تر سپرم ادھر ہی مر جاتے ہیں اور کچھ سپرم ہی vagina سے آگے fallopian tube تک جاتے ہیں، وہاں پر جو سپرم تیز حرکت کرتا ہے وہ پہلے انڈے تک پہنچ جاتا ہے۔ مگر جدید تحقیق کے مطابق fallopian tube میں موجود fluid میں کچھ خاص chemicals ہوتے ہیں جو کہ کسی خاص سپرم کو انڈے کی صرف مائل کرتے ہیں اور باقیوں کو پرے کرتے ہیں، مگر اس تحقیق میں ابھی یہ پتہ نہیں لگا کہ یہ ہوتا کیسے ہے اور اس میں کتنی حقیقت ہے۔ مگر یہ سب fallopian tube میں ہورہا ہے، اس سے پہلے vagina میں بہت سے سپرم مر جاتے ہیں۔
سو ایسے سمجھیں کہ ایک کام کرنے کے لیے ایک راستے سے گزر کر کسی جگہ جانا ہے اور اس راستے پر بہت خطرہ ہے ،اگر آپ صرف ایک آدمی کو بھیجیں گے تو بہت چانسس ہیں کہ وہ آدمی مر جائے۔ مگر اگر آپ سو آدمی کو بھیجیں گے تو کوئی ایک تو کامیاب ہوگا۔۔۔۔
اسی طرح ایک نارمل آدمی میں ایک ejaculation (خروج) میں 200 سے 300 ملین سپرم ہونے چاہیے ، جس میں سے 60 فیصد سپرم نارمل ہونے چاہیے، اور ان 60 فیصد سپرم میں بھی 40 فیصد سپرم تیز حرکت کرنے والے ہونے چاہیے۔۔۔۔ مگر اس سے کم تعداد/مقدار بھی ہو تب بھی مرد بچہ پیدا کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔۔۔۔
مرد میں سپرم کی کمی کو oligospermia کہتے ہیں، شدید oligospermia تب ہوتا ہے جب منی (semen) میں 5 ملین سے کم سپرم ہوں۔ اور ایک صورت حال ہوتی ہے azospermia جس میں خارج ہونے والی منی میں سپرم ہوتے ہی نہیں،
یہ دونوں صورت حال عام طور پر سپرم کو خصیوں سے عضو تناسل تک لے جانے والی نالیوں میں رکاوٹ، یا پھر خصیوں میں مسائل، یا پھر ہارمون کے مسائل کی وجہ سے ہوتی ہیں۔۔۔
~وارث على

Leave a Reply

Your email address will not be published.